لیجنڈری گلوکارہ ’’ سندھیامکھر جی ‘‘ انتقال کر گئیں

بھارت کی معروف اور بنگالی لیجنڈ گلوکارہ ’’ سندھیا مکھرجی ‘‘ 90 سال کی عمر میں انتقال کر گئیں ، ان کا انتقال کولکتہ کے نجی ہسپتال میں حرکت قلب بند ہونے کے باعث ہوا۔

بھارتی وزیراعظم نریندرمودی نے گلوکارہ کے دنیا سے رخصت ہو جانے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے ٹویٹر پر پیغام جاری کیا ۔ بنگالی گلوکارہ سندھیا مکھر جی نے سوگواروں میں بیٹی اور داماد کو چھوڑا ہے ،سندھیا مکھر جی کوبھارت میں لیجنڈ کا درجہ دیا جاتا ہے ،انہوں نے 24 جنوری کو “پدماشری ایوارڈ “لینے سے بھی انکار کر دیا تھا ،اس کے 3 روز بعد ان کا کورونا ٹیسٹ مثبت آیا جس پر انہیں سرکاری ہسپتال میں داخل کروایا گیا ، ان میں پھیپھڑوں کے انفیکشن کی علامات تھیں ساتھ ہی انہیں سانس لینے میں بھی دشواری تھی ۔ڈاکٹرز کو علاج کے دوران معلوم ہوا کہ سندھیا مکھر جی قلبی بیماری میں بھی مبتلا ہیں جو ان کی حالت کو مزید بگاڑ رہی ہے ، وزیراعلیٰ ممتا بینرجی نے سندھیا مکھر جی کو ” اپولو” ہسپتال منتقل کرنے کا فیصلہ کیا ۔ ڈاکٹرز کا کہناتھا کہ لیجنڈری گلوکارہ کی طبیعت منگل کے روز بگڑنا شروع ہوئی جس کے بعد انہیں شام میں شدید نوعیت کا ہارٹ اٹیک آیا ۔سندھیا مکھرجی کولکتہ میں واقع لیک گارڈنز میں رہائش پذیر تھیں ،لیجنڈری گلوکارہ نے بنگالی فلموں کیلئے ہزاروں کی تعداد میں گانے گائے اور البمز ریکارڈ کروائے، اس کے علاوہ وہ بالی ووڈ کیلئے بھی متعدد معروف گانے بھی گا چکی ہیں، انہوں نے بالی ووڈ میں گلوکارہ ’’ ہیمنتا مکھرجی ‘‘ کے ساتھ ڈو ئٹس گائے انڈسٹری نے انہیں گیتا شری کے اعزازی نام سے نوازا۔سندھیا مکھر جی 1931 میں کولکتہ میں پیدا ہوئیں اور اپنا پہلا گانا 1948 میں ہندی فلم ’’ انجان گڑھ ‘‘ کیلئے ریکارڈ کروایا جس کا میوزک رائے چند نے ترتیب دیا تھا۔ گلوکارہ نے معروف کمپوزر ایس ڈی برمن، روشن اور مدن موہن کے ساتھ کام کرتے ہوئے انڈسٹری کو کئی یادگار گیت دئیے،انہیں بنگال حکومت کی جانب سے ’’ بنگا بیبھوشن ‘‘ سے بھی نوازا جا چکا ہے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.