سونے سے قبل انٹرنیٹ کا استعمال کتنا خطرناک ہے؟

تحقیق کے مطابق رات کو سونے سے قبل میڈیا کا استعمال، یوٹیوب پر ویڈیوز یا پھر انٹرنیٹ براؤزنگ اور موسیقی سننا نیند کے لیے سخت نقصان دہ ثابت ہوتا ہے۔جرنل آف سلیپ ریسرچ میں شائع ہونے والی اس تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ موجودہ صورتحال بالخصوص کورونا وائرس کی عالمی وبا کے دوران یہ بات عام ہوگئی ہے کہ لوگوں کو نیند میں مسائل کا سامنا ہے۔جس کے نتیجے میں دیر سے سونا لوگوں میں بےحد عام ہو گیا ہے جبکہ بہت زیادہ فلمیں دیکھنا، ویب سیریز یا سوشل میڈیا پر پوسٹس دیکھنا بھی لوگوں کی زندگی کا حصہ بن گیا ہے کیونکہ کورونا کی وجہ سے تفریح کے دیگر ذرائع موجود نہیں ہیں۔تاہم یہ خدشات تو تھے ہی کہ اس طرزِ زندگی سے لوگوں کی صحت پر اثر پڑے گا مگر اب تحقیق میں بھی یہ بات ثابت ہو گئی ہے کہ رات کو سونے سے قبل میڈیا کا استعمال، یوٹیوب پر ویڈیوز یا پھر انٹرنیٹ براؤزنگ اور موسیقی سننا نیند کے لیے سخت نقصان دہ ثابت ہوتا ہے۔اس تحقیق میں ماہرین کی جانب سے 58 بالغ افراد کو ایک ڈائری رکھنے اور بستر پر جانے سے قبل میڈیا کے استعمال اور اسکی جگہ اور ملٹی ٹاسنگ کو ریکارڈ کرنے کے لیے کہا گیا تھا۔جب اس ریکارڈنگ کا تجزیہ کیا گیا تو معلوم ہوا کہ یہ عادت نقصان دہ ہے اور دماغی افعال کو متاثر کرتی ہے جو اچھی نیند کو دور بھگا کر انسان کو بےخوابی کا شکار بناتی ہے۔تاہم اس کی وجہ سے انسان کے ڈپریشن، کمزوری، درد شقیقہ اور دیگر صحت سے جُڑے مسائل میں مبتلا ہونے کا خدشہ بڑھ جاتا ہے جوکہ انسانی صحت کے لئے خطرناک ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.