حجاب والی لڑکی ایک دن بھارت کی وزیر اعظم ہوگی: اسد الدین اویسی

معروف مسلمان رہنما اور بھارت کے ایوان زیریں لوک سبھا کے رکن اسد الدین اویسی نے بھارت میں مسلم خواتین کے حجاب کے تنازع پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ حجاب پہننے والی لڑکی ایک دن بھارت کی وزیر اعظم بنے گی۔ رپورٹس کے مطابق اسد الدین اویسی نے اپنے خطاب میں کہا کہ ’اگر کوئی لڑکی حجاب پہننے کا فیصلہ کرتی ہے اور اپنے والدین سے ایسا کرنے کو کہتی ہے اور جب اس کے والدین اسے پہننے کی اجازت دیتے ہیں تو اسے پہننے سے کون روک سکتا ہے؟‘اسد الدین اویسی نے کہا کہ ’لڑکیاں حجاب پہنیں گی، نقاب پہنیں گی اور کالج جائیں گی اور ڈاکٹر، کلکٹر اور بزنس وومین بنیں گی۔‘ان کا مزید کہنا تھا کہ ’آپ سب ذہن میں رکھیں، شاید جب میں زندہ نہیں ہوں گا لیکن حجاب پہننے والی لڑکی ایک دن ضرور بھارت کی وزیراعظم بنے گی۔‘واضح رہے کہ حجاب کا تنازع بھارتی ریاست کرناٹک میں دسمبر کے آخر میں اس وقت شروع ہوا جب اُڈپی کے ایک گورنمنٹ پری یونیورسٹی کالج کی چند باحجاب طلباء کو کیمپس چھوڑنے کو کہا گیا۔اس کے بعد یہ معاملہ ریاست کے مختلف حصوں میں پھیل گیا جبکہ انتہا پسند ہندو نوجوان لڑکوں نے زعفرانی اسکارف پہن کر حجاب کے خلاف احتجاج کیا۔دوسری جانب گزشتہ دنوں کرناٹک میں باحجاب لڑکی مسکان کو ہندو انتہا پسندوں نے کالج جاتے ہوئے ہراساں کیا تھا جس کے جواب میں لڑکی نے ڈرے بغیر نعرہ تکبیر بلند کیا تھا۔مسکان کی بہادری پر جمعیت علماء ہند کے سربراہ مولانا محمود مدنی نے 5 لاکھ بھارتی روپے انعام کا اعلان کیا۔اس واقعے پر دنیا بھر میں مختلف انداز سے تبصرے اور تجزیے کئے جارہے ہیں، بھارت میں بھی اس پر بحث تیز ہوگئی ہے۔مسکان کی بہادری پر جمعیت علماء ہند کے سربراہ مولانا محمود مدنی نے 5 لاکھ بھارتی روپے انعام کا اعلان کیا۔اس واقعے پر دنیا بھر میں مختلف انداز سے تبصرے اور تجزیے کئے جارہے ہیں، بھارت میں بھی اس پر بحث تیز ہوگئی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.