موسیقی چوری کرنے کا الزام، کوک اسٹوڈیو کی وضاحت

کوک اسٹوڈیو سیزن 14 کے پروڈیوسر زلفی خان پر گانے ’تو جھوم‘کی دھن چوری کرنے کا الزام لگ گیا۔صوبہ سندھ کے شہر عمر کوٹ سے تعلق رکھنے والی گلوکارہ نرملا میگھنی نے کوک اسٹوڈیو سیزن 14 کے پہلے گانے ’تو جھوم‘کے موسیقار ذوالفقار جبار خان (زلفی) پر اپنے گیت کی موسیقی چرانے کا الزام عائد کیا ہے۔عمرکوٹ کے متوسط گھرانے سے تعلق رکھنے والی نرملا میگھانی نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے یہ دعویٰ کیا کہ’تو جھوم’ گانے کی دھن ان کی بنائی ہوئی ہے اور یہ دھن انھوں نے تقریباً سات ماہ قبل زلفی کو واٹس ایپ کے ذریعے بھیجی تھی.گلوکارہ نے کہا کہ یہ دھن میری ہے اور میں نے زلفی کو بھیجی تھی، انھیں سات ریکارڈنگز بھیجی تھیں، یہ دھن اُن میں سے ایک ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ’میں ایک نئی آرٹسٹ ہوں، میں اُن کے ساتھ کام کرنا چاہتی تھی، میں نے انھیں بتایا کہ میں اوریجنل میوزک بناتی ہوں تاکہ وہ مجھے چانس دیں سکیں‘۔کوک اسٹوڈیو پاکستان کی جانب سے کہا گیا ہے کہ گانے کی دھن چوری کرنے کی خبر میں کوئی صداقت نہیں اور اس نوعیت کا الزام بے بنیاد ہے۔زلفی خان کا بھی بیان بی بی سی کو موصول ہوا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ ان کا کام کسی سے نہ تو مستعار لیا جاتا ہے اور نہ ہی بنا کریڈٹ استعمال کیا جاتا ہے۔ زلفی کا کہنا ہے کہ کوک اسٹوڈیو کے موجودہ سیزن پر جب کام شروع کیا گیا تو ان کا ارادہ تھا کہ پوری دنیا پاکستانی میوزک سُنے۔زلفی نے مزید کہا کہ ہمارا ارادہ تھا کہ اپنا میوزک اور ٹیلنٹ اس طرح پیش کیا جائے کہ ساری دنیا کو معلوم ہو کہ پاکستانی کیا کر سکتے ہیں۔ اور پاکستان قوم کون ہے۔ ہمارا ارادہ پاکستان کی ثقافت کی عزت کروانا تھا۔نرملا کا کہنا ہے کہ انھوں نے یہ دھن پاکستان میں فنکاروں کی پزیرائی کرنے والی مشہور سماجی شخصیت میاں یوسف صلاح الدین (میاں سلی) کو بھی اسی وقت بھیجی تھیں جب انھوں نے اپنی ریکارڈنگز زلفی کو بھیجیں۔اس دعوے کے متعلق جاننے کے لیے بی بی سی نے میاں یوسف صلاح الدین سے رابطہ کیا تو انھوں نے اس بات پر اتفاق کیا کہ کوک اسٹوڈیو کے گانے ’تو جھوم‘ کی دھن نرملا میگھانی کی دھن پر مبنی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ’اس میں کوئی شک نہیں کہ یہ نرملا کا گانا ہے، اس کی استھائی (گانے کا آغاز) بالکل وہ ہی ہے‘۔میاں یوسف صلاح الدین کا کہنا تھا کہ ’میں خود ایک میوزک کمپوزر ہوں، اس لیے جانتا ہو کہ یہ نرملا میگھانی کی دھن ہے جس میں بہت معمولی رد و بدل کیا گیا ہے‘۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.