چیف جسٹس نے امیر جماعت اسلامی کو جھاڑ پلادی

چیف جسٹس پاکستان گلزار احمد نے امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن کو جھاڑ پلادی۔سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں نسلہ ٹاور کیس کی سماعت ہوئی تو نسلہ ٹاور کو توڑنے کا عمل رکوانے والے جماعت اسلامی کراچی کے امیر حافظ نعیم الرحمان سپریم کورٹ پہنچ گئے۔ دوران سماعت حافظ نعیم الرحمان نے نسلہ ٹاور کیس پر روسٹرم پر آکر بولنے کی کوشش کی تو چیف جسٹس نے امیر جماعت اسلامی حافظ نعیم الرحمن پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہٹیں یہاں سے، کوئی سیاسی تقریر کی اجازت نہیں، کون ہیں آپ؟۔
حافظ نعیم الرحمن نے جواب دیا کہ میں جماعت اسلامی کراچی کا امیر حافظ نعیم الرحمن ہوں۔ مجھے تھوڑا سن لیں۔ میں متاثرہ افراد کے لیے معاوضے کی بات کرنا چاہتا ہوں۔ جسٹس قاضی محمد امین احمد نے کہا کہ پلیز، کوئی بات نہیں، ہٹ جائیں یہاں سے۔
چیف جسٹس نے کمشنر کراچی سے کہا کہ آپ نسلہ ٹاور کو نیچے سے گرا رہے ہیں، کیا بنیادیں کمزور نہیں ہوں گی؟ اس طرح تو پوری عمارت نیچے گر جائے گی، اگر کوئی حادثہ ہوا تو کون ذمہ دار ہوگا؟۔کمشنر کراچی نے کہا کہ ایسا نہیں ہے، عمارتوں کو گرانے کا یہی طریقہ کار ہے۔ اوپری منزلوں پر انہدام بعد میں ہوگا۔سپریم کورٹ نے کمشنر کراچی کو ایک ہفتے میں عمارت منہدم کر کے رپورٹ جمع کرانے کا حکم دیا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.